امریکی صدر جیفرسن کا تاریخی قرآنی نسخہ دبئی ایکسپو میں،قرآن کے تاریخی نسخے کو ایک خصوصی طور پر تیار کیے گئے لکڑی کے باکس میں واشنگٹن میں کانگرس کی لائبریری سے بھیجا گیا ہے 61

امریکی صدر جیفرسن کا تاریخی قرآنی نسخہ دبئی ایکسپو میں،قرآن کے تاریخی نسخے کو ایک خصوصی طور پر تیار کیے گئے لکڑی کے باکس میں واشنگٹن میں کانگرس کی لائبریری سے بھیجا گیا ہے

(سٹاف رپورٹ ،تازہ اخبار،پاک نیوز پوائنٹ )

امریکہ کے صدر تھامس جیفرسن کے پاس رہنے والا قرآن مجید کا تاریخی نسخہ دبئی ایکسپو 2020 میں امریکی پویلین میں عام لوگوں کے دیکھنے کے لیے رکھا گیا ہے۔
یہ پہلی بار ہے کہ اس تاریخی نسخے کو واشنگٹن میں امریکی کانگرس کی لائبریری سے کسی عالمی نمائش میں بھیجا گیا ہے۔
دبئی ایکسپو میں امریکی پویلین نے آفیشل ٹوئٹر اکاؤنٹ کے ذریعے بتایا ہے کہ ’یہ نسخہ امریکہ کے پویلین میں رکھا گیا ہے جس کے تھیم کا عنوان ہے ’زندگی، آزادی اور مستقبل کے لیے۔‘
تھامس جیفرسن امریکہ کے تیسرے صدر تھے جن کو امریکی آزادی کے ڈیکلریشن کے بنیادی خالق کے طور پر یاد کیا جاتا ہے۔
دو جلدوں پر مشتمل اس تاریخی ایڈیشن کا انگلش ترجمہ سنہ 1734 میں جارج سیل نے کیا تھا۔
لکڑی کے باکس کے ساتھ چار انچوں والی خصوصی ٹرے بھی ہیں جن کے ساتھ سنسر لگے ہیں جو وائبریشن کے ذریعے درجہ حرارت میں تبدیلی کا بتاتے ہیں۔
امریکی کانگرس کی لائبریری سے مکہ کا ایک تاریخی نقشہ بھی دبئی ایکسپو میں نمائش کے لیے پیش کیا گیا ہے۔
تاریخی قرآنی نسخے کو واشنگٹن سے دبئی میں جاری عالمی ایکسپو تک پہنچانے کے لیے خصوصی سکیورٹی سٹاف متعین کیا گیا۔
عرب نیوز کے مطابق مانا جاتا ہے کہ تھامس جیفرسن جو سنہ 1801 سے 1809 تک دو مدتوں کے لیے صدر رہے، نے قرآن کا یہ نسخہ اس وقت حاصل کیا جب وہ قانون کی تعلیم حاصل کر رہے تھے۔
دو جلدوں پر مشتمل قرآن کے اس نسخے کی طباعت لندن میں کی گئی تھی اور اس سے پہلے کبھی امریکہ سے باہر نہیں لے جایا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں