پاک نیوز پوائنٹ کو اپنی تحریریں بھیجنے کا طریقہ کار اور ضروری ہدایات

پاک نیوز پوائنٹ میں کالم کیسے لکھا جائے؟
اگر آپ پاک نیوز پوائنٹ کے کالمز میں اپنے مضامین، بھیجنے کے خواہش مند ہیں تو آپ کو مندرجہ ذیل باتوں کا خیال رکھنا پڑے
کالمز آپ کی ذاتی تخلیق ہو نہ کہ کسی کا نقل شدہ ہو.وہی کالم
شائع ہوسکے گا جو صرف پاک نیوز پوائنٹ کو ہی ارسال کیا گیا ہو، اگر آپ کی تحریر پہلے کہیں اور شائع ہو چکی ہے تو وہ پاک نیوز پر شائع نہیں کیا جائے گا۔
کالم کے متن میں انگریزی الفاظ استعمال کرنے سے گریز کیا جائے. کالم کی زبان عام فہم اور سلیس ہونی چاہیے کالم لکھنے کے بعد اس کو ایک یا دو دفعہ خود پڑھ لیں تاکہ ممکنہ غلطیوں کو دور کیا جاسکے. اسلام،صحابہ کرام ، نظریہ پاکستان، افواج پاکستان، اقلیتیوں کے خلاف،غیراخلاقی مواد اور فرقہ وارانہ مواد نہیں پبلش ہو گا اور ارسال کرنے سے گریز کریں۔
کالم کی طوالت 600 سے کم نہ ہو اور 2000 الفاظ کے درمیان ہونی چاہیے.
پاک نیوز پوائنٹ آپ کو موقع دیتا ہے کہ آپ اپنے بلاگز، مضامین اور کالمز
پاک نیوز پوائنٹ بلاگز کو بھیجیں.
پاک نیوز پوائنٹ بلاگز ان کو اپنی ویب سائٹ پر نمایاں جگہ دے گا اور آپ کے بلاگز کو اپنے سوشل میڈیا اکاؤنٹس پر شیئر بھی کرے گا۔
سب سے اہم، بلاگ بھیجنے کے بعد شائع ہونے کے لئے باری کا انتظار کریں، سب شائع ہوں گے،
بلاگ کا ٹائٹل بھی لکھیں، اپنا نام اور فیس بک ٹویٹر آئی ڈی آخر میں لکھیں،

نوٹ : اگر کسی کی مسلسل تین تحریروں میں سے کاپی پیسٹ آیا تو معذرت کے ساتھ اسکی تحریر دوبارہ شائع نہیں ہو گی

آرتھر پروفائل۔کم از کم 30 بلاگ
پاک نیوز پوائنٹ پر شائع ہونے کے بعد بنائی جائے گی، اور اوتھر پروفائل بننے کے بعد اگر کسی نے مستقل ایک ماہ تک کوئی تحریر نہ بھیجی تو اسکی پروفائل ختم کر دی جائے گی۔
اگر آپ پاک نیوز پوائنٹ پر اشاعت کیلئے مضامین، ادبی تحریریں، کتابیں، شاعری، ٹیکنالوجی کے مضامین و خبریں، کالم، اخباری خبریں، مزاحیہ تحریریں، پکوان کی تراکیب یا دیگر تحریریں ارسال کرنا چاہتے ہیں تو نیچے دئیے گئے ای میل پر اپنی تحریر ارسال کریں۔

ای میل :- PakNewsPoint1@gmail.com

نوٹ :- کالم نویس کی ذاتی رائے کا ادارہ ذمہ دار نہیں ہو گا۔

ایڈیٹر پاک نیوز پوائنٹ *اردو