Millions die each year in Europe from air pollution 73

فضائی آلودگی سے یورپ میں ہر سال لاکھوں اموات

(سٹاف رپورٹ،تازہ اخبار،پاک نیوز پوائنٹ )

یورپی یونین کے رکن ممالک میں ہر سال چار لاکھ سے زائد افراد فضائی آلودگی کے سبب قبل از وقت موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں۔ یہ بات کوپن ہیگن میں قائم یورپی ماحولیاتی ایجنسی کی ریسرچ سے سامنے آئی ہے۔ اس ایجنسی نے یہ بات بھی واضح کی ہے کہ فضائی آلودگی کے حوالے سے یورپ میں صورتحال گزشتہ 30 برسوں کے دوران بہتر ہوئی ہے۔ 1990 میں فضائی آلودگی کے سبب ہونے والی قبل از وقت اموات کی تعداد 10 لاکھ تھی۔ رپورٹ کے مطابق فضائی آلودگی آج بھی ماحول کے لیے سب سے بڑا خطرہ ہے جس کے بعد صوتی آلودگی ہے جو یورپی یونین میں ہر سال 12 ہزار قبل از وقت اموات کی وجہ بنتی ہے.
دو اعشاریہ پانچ مائیکرو میٹر سے کم قطر کے ساتھ، ٹھیک خاص مادے سے منسلک اموات کا تخمینہ 2018 کے لیے تین لاکھ 46 ہزار لگایا گیا تھا.
یورپی یونین کے فضائی آلودگی کے ڈیٹا سینٹر نے کہا کہ اگلے سال اموات میں واضح کمی کو جزوی طور پر سازگار موسم کی وجہ سے کم کیا گیا لیکن سب سے بڑھ کر پورے براعظم میں ہوا کے معیار میں کافی بہتری آئی۔
رپورٹ کے مطابق 1990 کی دہائی کے اوائل میں باریک ذرات جو پھیپھڑوں میں گہرائی تک داخل ہوتے ہیں، یورپی یونین کے 27 رکن ممالک میں تقریباً 10 لاکھ قبل از وقت موت کا باعث بنے.
یہ تعداد 2005 تک نصف سے کم ہو کر چار لاکھ 50 ہزار تک پہنچ گئی تھی۔
2019 میں باریک ذرات جرمنی میں 53 ہزار آٹھ سو، اٹلی میں 49 ہزار نو سو، فرانس میں 29 ہزار آٹھ سو اور سپین میں 23 ہزار تین سو قبل از وقت اموات کا سبب بنے۔
پولینڈ میں 39 ہزار تین سو اموات ہوئیں، جو کہ فی کس آبادی کے لحاظ سے سب سے زیادہ تعداد ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں